رہوں تیری حمد ثنا میں برابر خدا یا وہ توفیق مجھ کو عطا کر

رہوں تیری حمد ثنا میں برابر خدا یا وہ توفیق مجھ کو عطا کر

شفیع تمنّاؔکولکاتا


رہوں تیری حمد ثنا میں برابر
خدا یا وہ توفیق مجھ کو عطا کر
زمیں آسماں چاند سورج ستارے
ترے زیرِ فرمان سارے کے سارے
سبھی تیرے بندے کہ تو بندہ پرور
رہوں تیری حمد و ثنا میں برابر
خدا یا وہ توفیق مجھ کو عطا کر
تو غفّار، جبّار، قہّار بھی ہے
رحیم اور رحمن ستّار بھی ہے
تو مختارِ کل ہے ترا کون ہمسر
رہوں تیری حمد ثنا میں برابر
خدا یا وہ توفیق مجھ کو عطا کر
تمنا یہی دھن یہی مدّعا ہے
یہی اپنا پیغام اپنی صدا ہے
سناتا چلوں سب کو اللہ اکبر
رہوں تیری حمد ثنا میں برابر
خدا یا وہ توفیق مجھ کو عطا کر

Post a comment

0 Comments