کیسے ہو تحریر اس کی مدحت اس کی شان دشت دل حیران

کیسے ہو تحریر اس کی مدحت اس کی شان دشت دل حیران

محمداقبال نجمیؔ(گوجرانوالہ)


کیسے ہو تحریر
اس کی مدحت اس کی شان
دشت دل حیران


اس کی عالیٰ ذات
جانے سب پوشیدہ بھید
عالم عالی شان


سارے حرفوں میں
تیرا نور چمکتا ہے
میرے لفظوں میں


یکتا ہے وہ ذات
جلوہ جلوہ اس کانور
ہر جا اس کے رنگ


سب کا داتا ہے
کھیتوں اور دریائوں کی
پیاس بجھاتا ہے

ایک تبصرہ شائع کریں

0 تبصرے