تو اپنی رحمتوں کی عطا بے شمار دے بے چینیاں سمیٹ لے دل کو قرار دے

تو اپنی رحمتوں کی عطا بے شمار دے بے چینیاں سمیٹ لے دل کو قرار دے

محمد حسین دلبرؔ ادیبی


تو اپنی رحمتوں کی عطا بے شمار دے
بے چینیاں سمیٹ لے دل کو قرار دے


میخانۂ الست میں ٹوٹے نہ جو کبھی
پیمانۂ رسولؐ سے ایسا خمار دے


عشقِ رسولؐ جذبۂ صادق لئے ہوئے
یارب کرم سے امت مسلم پہ وار دے


طوفان غم میں کشتیٔ مسلم ہے، اے خدا
اپنے کرم سے پھر سر ساحل اتار دے


آلودہ پھر کبھی نہ ہو عصیاں کے داغ سے
نورؐ نبیؐ سے سینۂ دلبرؔ نکھار دے

ایک تبصرہ شائع کریں

0 تبصرے