یاد رکھو اس خدائے پاک کو نطق بخشا جس نے مشتِ خاک کو

یاد رکھو اس خدائے پاک کو نطق بخشا جس نے مشتِ خاک کو

نشاطؔ غوری (کراچی)


یاد رکھو اس خدائے پاک کو
نطق بخشا جس نے مشتِ خاک کو


کوئی بھی اپنا نہیں اس کے سوا
دوسرے سے کیوں رکھیں ہم واسطہ


ہر گھڑی تعریف اس کی چاہئے
جو بھی ہو توصیف اس کی چاہئے


عزتِ اسلام کا ستار ہے
بخشنے والا ہے وہ غفار ہے


اس کے قبضے میں ہماری جان ہے
وہ ہمارا دین ہے ایمان ہے


ماسوا اس کے کوئی جچتا نہیں
اس سے بڑھ کر کوئی بھی اعلیٰ نہیں


ہم ہیں اس کے وہ ہمارا ہے نشاطؔ
اس کی محکومی گوارا ہے نشاطؔ

ایک تبصرہ شائع کریں

0 تبصرے