تنہا ہے لاشریک ہے تو ایک ذات ہے تونے بنائی تنہا یہ کل کائنات ہے

تنہا ہے لاشریک ہے تو ایک ذات ہے تونے بنائی تنہا یہ کل کائنات ہے

ڈاکٹر قمرؔ بہرائچی


تنہا ہے لاشریک ہے تو ایک ذات ہے
تونے بنائی تنہا یہ کل کائنات ہے


ربُّ العلیٰ تو مولیٰ فقط تیری ذات ہے
تیرے ہی دم سے باقی جہاں کی حیات ہے


موجود ہر جگہ ہے تو سب کے قریب ہے
دیکھا نہیں کسی نے تو یہ اور بات ہے


قرآں کی روشنی میں اگر دیکھئے جناب
حکمِ خدا پہ چلنا ہی وجہِ نجات ہے


طوفان سے ڈرو نہ کسی زلزلے سے اب
ہاتھوں میں بس خدا کے ہی موت و حیات ہے


مانگے بغیر دیتا ہے ہر چیز تو مجھے
کتنی بڑی یہ مجھ پہ تری التفات ہے


راہِ عمل پہ چلنے کی توفیق بخش دی
ہم عاصیوں پہ تیری بڑی التفات ہے


کچھ بھی نہیں رہے گا خدا کے سوا یہاں
ہر چیز اس جہاں کی قمر بے ثبات ہے

Post a comment

0 Comments