دیکھی تھی کس نے شکل یہ فصلِ بہار کی کھیتی اگائی کس نے یہاں لالہ زار کی؟

دیکھی تھی کس نے شکل یہ فصلِ بہار کی کھیتی اگائی کس نے یہاں لالہ زار کی؟

ڈاکٹرراحت مظاہری


دیکھی تھی کس نے شکل یہ فصلِ بہار کی
کھیتی اگائی کس نے یہاں لالہ زار کی؟


قدرت کے شاہکار ہیں چھوٹے بڑے پہاڑ
صورت بھی مختلف ہے ہراک آبشار کی


اک پل نہیں ہے قید‘ کچھ اپنے پرائے کی
رحمت ہراک پہ عام ہے پروردگار کی


محتاج اس کے سب ہیں وہ ہے سب سے بے نیاز
چلتی ہے اس کے آگے کسی شہریار کی؟


کہتے ہوں جب فرشتے حکومت ہے کس کی آج؟
حالت ہو سن کے غیر دلِ بے قرار کی


مایوس ہورہا ہے تو رحمت سے اس کی کیوں؟
سنتا ہے جو دعائیں تری باربار کی

Post a comment

0 Comments