تیری رحمت بیکراں، تیرا کرم ہے بے حساب

تیری رحمت بیکراں، تیرا کرم ہے بے حساب

ریاض غازی پوری


تیری رحمت بیکراں، تیرا کرم ہے بے حساب
نور سے معمور ہوجائے دلِ خانۂ خراب


میں ذلیل و خوار ہوں لیکن ترا بندہ تو ہوں
ذرّۂ ناچیز ہوں، آقا مرا گردوں رکاب


بندۂ خاکی ہوں میں، سہو و خطا میرا شعار
تو رحیم و راحم و بخشندۂ اجر و ثواب


تو غریبوں کا ہے حامی، تو یتیموں کی پناہ
بے کس و مجبور کا تو خالقِ ہر شیب و شاب


بندۂ عاصی ہوں میں، خاکی ہوں میں خاطی ہوں میں
جرم بے حد ہے مرا، بخشش تری ہے بے حساب

Post a comment

0 Comments