خدا قبرِ وحشت سے مانوس کردے کلامِ ہدایت کو سینے میں بھردے

خدا قبرِ وحشت سے مانوس کردے کلامِ ہدایت کو سینے میں بھردے

انجینئرخلیل احمد


خدا قبرِ وحشت سے مانوس کردے
کلامِ ہدایت کو سینے میں بھردے


مرے قلب میں نور اس کا بسا دے
مری مشکلوں کو تو آساں بنادے


تلاوت کی توفیق ہم کو عطا کر
کرم اور زیادہ تو ہم پہ خدا کر


اسے میری بخشش کا ساماں بنادے
زمانے کے غم کو تو دل سے مٹادے


خلیلؔ شکستہ پہ چشمِ کرم ہو
دوعالم میں ہر آن اس کا بھرم ہو

ایک تبصرہ شائع کریں

0 تبصرے