Yekke Andaz Se Ho kar ye andaz digar hona > Shameem Yusufi

Yekke Andaz Se Ho kar ye andaz digar hona > Shameem Yusufi

یکے انداز سے ہو کر بہ اندازِ دگر ہونا
اشارے پر ترے قائم یہ شام اور یہ سحر ہونا
ہمیں بھی یاد ہے اہل جہاں بھی یاد رکھتے ہیں
کبھی بیمار ہو جائیں تو تیرا چارہ گر ہونا
ترے درسِ محبت سے ہیں خود آگاہ دنیا میں
وگر نہ سخت مشکل تھا ‘یہاں اپنی خبر ہونا
ترے علمِ عطا کردہ سے ہم نے وسعتیں پائیں
کہاں تجھ کو گوارا تھا ہمارا مختصر ہونا
ترے ہی قرب کی دولت سے سب کچھ کر لیا ہم نے
بڑا اعزاز تھا دشمن کے نیزے پریہ سر ہونا
شمیمؔ یوسفی نے راز افشا کر دیا‘لیکن
تجھے کیا زیب دیتا ہے کسی کا پردہ در ہونا 


شمیم یوسفی

Ex-Postmastr-Mahalla Qazitola
NearSraiMasjid.At/Po-Ara(Bihar)

ایک تبصرہ شائع کریں

0 تبصرے