متاع علم و ہنر لازوال دے اللہ مجھے بلندیٔ فکر و خیال دے اللہ

متاع علم و ہنر لازوال دے اللہ مجھے بلندیٔ فکر و خیال دے اللہ

حسن رضا اطہر


متاع علم و ہنر لازوال دے اللہ
مجھے بلندیٔ فکر و خیال دے اللہ


گداز و سوزش عشق بلال دے اللہ
شراب عشق مرے دل میں ڈال دے اللہ


مرا وجود ہے بے سود اس لئے مجھ سے
وہ کام لے کہ زمانہ مثال دے اللہ


سروں پہ تان دے حفظ و اماں کی اک چادر
قصوروار ہیں رحمت کی شال دے اللہ


خیال سختی محشر سے مرتعش ہے بدن
کوئی نجات کی صورت نکال دے اللہ


وفا خلوص کی خوشبو ہی جسم سے پھیلے
سرشت بد نہ کوئی ابتذال دے اللہ


تو ہی ہے رزاق مطلق اے مالک و خالق
نبی کے صدقے میں رزق حلال دے اللہ

Post a comment

0 Comments