ازل سے ہے تو ہی تجھی کو بقا ہے تو مالک ہے سب کا تو سب کا خدا ہے

ازل سے ہے تو ہی تجھی کو بقا ہے تو مالک ہے سب کا تو سب کا خدا ہے

الحاج حکیم رازیؔادیبی 16


ازل سے ہے تو ہی تجھی کو بقا ہے
تو مالک ہے سب کا تو سب کا خدا ہے


ہو تعریف جتنی بھی تیری بجا ہے
تو ہی اک سزاوار حمدوثنا ہے


ترے آستاں پر مرا سر جھکا ہے
مری ابتدا تو مری انتہا ہے


زمانے میں ہر شے کی تکمیل تجھ سے
تو رہ رو ہے رستہ ہے منزل نما ہے


کرم سے تو اس کا بھی کشکول بھردے
الٰہی ترے در کا رازیؔ گدا ہے

Post a comment

0 Comments