خدایا میں عبد گنہگار ہوں ہوا و ہوس میں گرفتار ہوں

خدایا میں عبد گنہگار ہوں ہوا و ہوس میں گرفتار ہوں

گرسرن لال ادیبؔلکھنوی


خدایا میں عبد گنہگار ہوں
ہوا و ہوس میں گرفتار ہوں


عطا کر شفا مجھ کو بیمار ہوں
ترے ہی کرم کا طلب گار ہوں


نہ مجھ سے ہوا کوئی بھی کارِ خیر
مگر میں نہیں ہوں پرستارِ غیر


نہیں دیر پا کوئی رنگِ مجاز
سوا تیرے کوئی نہیں کارساز


تری رحمتوں کا نہیں کچھ شمار
تجھی سے ہے یہ زندگی مستعار


تجھی سے ہے میری ہر اک التجا
نہیں بخشنے والا تیرے سوا


تو ہے مالک یوم دیں اے خدا
رہے آبرو میری روزِ جزا

ایک تبصرہ شائع کریں

0 تبصرے